Tag » Ego

Pleasing Me

My name is Tim and I am a people pleaser. I think I always have been. I want people to be happy. I want them to enjoy themselves. 791 altre parole

Recovery

Let go

Death’s grip clings to past /

Mourning now all we must lose /

Blind to all we gain

Faith

مرضی کے کپڑے

کچھ دوست ایسے بھی ہوتے ہیں جن سے انسان اس قدر محبت کرتا ہے کہ انہیں کبھی اپنی زندگی میں کھونا نہی چاہتا۔ نا وہ انہیں خضر راہ کا خطاب دے کر ایسے سوال پوچھتا ہے کہ جن کے جواب کے بعد وہ راستہ الگ کرنا بہتر سمجھیں۔ وہ انہیں انہی کی حالت میں قبول کرتا ہے۔بھلے ہی خود کو ان کے مطابق دھالنا پڑے۔

آج عبداللہ بھی اپنے کسی ایسے ہی ایک دوست سے موبائل پر کچھ گفتگو کر رہا تھا۔اسکا موڈ آج بہت خوشگوار تھا۔وہ اپنی خوش گپیوں میں مشغول تھاکہ اچانک کسی بات پراسکا دوست بھڑک اٹھا اور اس کے الفاظ کا غلط مطلب لیتے ہوئے اس سے گفتگو منقطع کرنے کا کہہ کر چل دیا۔عبداللہ نے کوشش کی کہ وہ اسے کسی طرح روک لے اور بات کو کلیئر کرے مگر وہ جناب تھے کے سننے کو تیار ہی نہی تھے۔عبداللہ نے بہت تیز گاڑی چلائی کہ کسی طرح اس کے قریب پہنچ کر اس سے مزید دو گھڑی بات کر سکے۔ آخرکار عبداللہ تھک کر خاموش ہو گیااور بے ہنگم سوچوں کی ٹرافک میں پھنس کر رہ گیا۔

وہ سوچنے لگا کہ انسان ظاہر پرست تو شاید روز اول سے ہی تھا مگر اب اس جدت کے دور میں اس نے دوسروں کے برہنہ الفاظ کو اپنی مرضی کے کپٹرے پہنا نا بھی شروع کر دیا ہے۔ظاہر ہے جب تک آ پ کسی شخص کو اپنے سامنے نا دیکھ لیں اس کی اصل حالت کو کیسے جانچ سکتے ہیں۔ سامنے پا لینے کے باوجود اکثر لوگ تو کسی کے اندر بھی جھانک نہیں پاتے۔ پردے کے پیچھے سے کہی گئی بات کواس کے اصل روپ میں دیکھنے کے لیئے دیکھنے والی آنکھ چاہیئے ہوتی ہے۔ موبائل، موبائل اپلیکیشنزاورسوشل میڈیاز کے بے شمار اور بہت ہی دلچسپ اموشنز کی تصاویر مہیا کرنے کے باوجود انسان اپنے اندر ابلتے جذبات اور احساسات کو دکھانے سے قاصر ہے۔

لکھنے والے نے کیا سوچ کر اور کس مقصد کے لیئے کتاب لکھی، پڑھنے والا ہمیشہ اپنی سوچ، کپیسیٹی،نیت،اور ضرورت کے مطابق اسے سمجھ پاتا ہے۔وہ کبھی نہی سوچتا کہ لکھنے والے نے کس حالت میں لکھا یا وہ ہمیں کیا سمجھانا چاہتا ہے۔ ہم کسی سے پوچھنا بھی گوارہ نہیں کرتے کہ شاید اصل مفہوم تک پہنچ سکیں۔ اور ضرورت بھی کیا ہے یہ سب جاننے کی؟ اصل مطلب تک پہنچنے کی۔ ہم تو آجکل صرف لطف اٹھاتے ہیں۔ کسی نے اپنی مالی حالت کیا بتا دی، اپنی انہونی کیا بیان کر دی،دکھ تکالیف اور پریشانیاں کیا سامنے رکھیں، ہم اسے حوصلہ کے دو الفاظ کہنے کی بجائے ، اسے تصلی دینے کی بجائے، کوئی اچھا مشورہ دینے کی بجائے خوب محظوظ ہوتے ہیں۔اگر محظوظ نا بھی ہوں تو یہ ضرور سوچتے ہیں کہ یہ تو ہر وقت روتا ہی رہتا ہے۔

اب عبداللہ کے ذہن میں ایسے سوال نہی آتے تھے کہ لوگ ایسا کیوں کرتے ہیں۔ کیونکہ اسے معلوم تھا کہ کسی کو اسکی غلطی دکھانے سے کبھی بھی نظر نہی آتی۔اپنی غلطی دیکھنے کے لیئے کسی کی آنکھ کی ضرورت نہیں پڑتی اور اپنی سچائی دکھانے کے اپنی آنکھیں کسی کو دینی نہیں پڑتیں۔

وہ نہ تو کسی کی سوچ بدلنا چاہتا تھا اور نا ہی بدل سکتا تھا۔وہ صرف خود کو بدلنا چاہتا تھا۔اس سے پہلے کہ اسکی سوچوں کی لگام اس کے ہاتھ سے چھوٹ جاتی اور اسکی گاڑی کسی کھائی کی جانب چل دوڑتی اس نے خضر کے گھر کی راہ لی۔ تاکہ دو گھڑی اس بے لوس اور با ظرف انسان کے ساتھ دکھ سکھ بانٹ سکے۔

(نویداسلم)

Ego

Stop Putting Yourself Down!!!

I belong to a particular running group in Facebook specifically for slower runners. It’s a fun group, for the most part, but sometimes some of the posts sadden me. 285 altre parole

Running

Just a reminder about love...

“Many times I say learn the art of love, but what I really mean is:  Learn the art of removing all that hinders love.  It is a negative process.  374 altre parole

Life

Not to yield, but to tame the ego.

His atrocious ego,

Shaped by his thoughts,

Repleted with distorted truth,

Paradoxical and awed.

His starving ego,

Now feeds upon his soul.

Bit by bit, 120 altre parole

Blog

Chains of illusion.

“In search of the Truth that shall sustain, uphold, and guide you, you have looked outwards and sought for it objectively, and thus have been lost in the shadows of manifestation. 308 altre parole

Life